ماں؛ پیکرِ رحمت اردو نظم

ماں؛ پیکرِ رحمت اردو نظم

Maan; Paekar-e-Rehmat

written by Qasim Imam

صَدق کہ خدا کی ازحد نعمت کا پیکر

یہ جواز تم رکھتی ہو، رُوبرو کرلیتی ہو

فعل میرے خام بھی ہوں چاہے

بھول جاتی ہو، معاف کردیتی ہو

کھیل میرے تمام ہوتے ہیں پھوہڑ

پاس  جوآتی ہو، چاچھ کرلیتی ہو

تختِ بازو کا وہ طلسمی سکوں

نذر کراتی ہو، عادت کردیتی ہو

تکیہِ بازو سے مجھے بے دخل

جب کرتی ہو، غضب کردیتی ہو

پیار کا وہ تبسم مکھ ہی مقصودہوتا

جب مسکراتی ہو، چِیر  کردیتی ہو

اک مُسکان کی خاطر خود کو گِراتا ہوں مگر

غرور باقی رکھتی ہو، خُود خمیدہ کرلیتی ہو

سُوئے دہر، لالچِِ بہشت نہیں مجھے

محض دُعا نوازتی ہو، بھلا کردیتی ہو

اَن گِنت حج تو حَجرہٗ انگنائی میں کر لئے

تڑکے کو زیارت کراتی ہو، سحر کردیتی ہو

جانبین علالت و آزاری سبقت ہمیں دیتی ہو

عجب ظرف دکھاتی ہو، کمال کردیتی ہو

باقی ماں کی ذات تو رہے گی بہرحال

بارہا یاد آتی ہو، مکرّر گھر کر جاتی ہو

روک لو وقتِ حاضر کو قَاسِمْ کہ آئندہ

 سانس آتی ہو یا، جاں کُوچ کر جاتی ہو

More by Qasim Imam

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Next Post

Honey bee

Thu Apr 16 , 2020
Honey Bee Writer: Sidrah asghar ! Some days words will spill out I’m thinking Like honey from a Jar…. Your […]

Urdu Zindgy.com Site

Zindgy.com urdu

Write for Zindgy

Write for Zindgy Write for Zindgy or Blog (English or Urdu) Send your write-up file at websfocus@gmail.com Terms and Conditions

Number #1 Baby Names Database in the World

%d bloggers like this: